امریکن لائسٹیف سکول کا طالبعلم اُستاد کے تشدد سے جاں بحق

    September 5, 2019 4:11 pm PST
taleemizavia single page

لاہور: گلشن راوی میں قائم امریکن لائسٹیف سکول میں طالب علم حافظ حنین کمرہ جماعت میں استاد کے تشدد سے جاں بحق ہوگیا ہے.

نویں‌ جماعت کے طالب علم حافظ حنین کو سبق یاد نہ کرنے پر اُستاد نے بیہمانہ تشدد کیا جس کے باعث جاں بحق طالب علم کا سانس بند ہوگیا اور وہ کمرہ جماعت میں ہی بے ہوش ہوگیا.

حافظ حنین کے ساتھی طلباء کہتے ہیں کہ تشدد کے دوران حنین سانس بند ہونے کا بار بار کہتا رہا اور استاد کی جانب سے تشدد کے دوران ہی وہ بے ہوش گیا جس کے بعد اُسے ہسپتال منتقل کرنے کے لیے ایمبولینس کو طلب کیا گیا.

حافظ حنین ہسپتال پہنچنے سے پہلے ہی جان کی بازی ہار گیا.

امریکن لائسٹیف سکول کی انتظامیہ کے مطابق کامران کمپیوٹر کا اُستاد تھا اور وہ گزشتہ پانچ برس سے اسی سکول میں بطور استاد تعینات تھا. ساتھی طلباء کا کہنا ہے کہ حافظ حنین 2018ء میں نویں جماعت میں کمپیوٹر کے مضمون میں فیل ہوگیا تھا اور سکول نے اسے ڈیموٹ کر کے دوبارہ نویں جماعت میں ہی بٹھا دیا تھا.

پولیس نے امریکن لائسٹیف سکول پہنچ کر تشدد کرنے والے اُستاد کو موقع پر گرفتار کر لیا اور گلشن راوی تھانے کی پولیس نے تفتیش شروع کر دی ہے.

خاتون ذیشان ضیاء راجہ نے 1996ء میں امریکن لائسٹیف کی بنیاد رکھی تھی اور اب اس سکول کے تحت لاہور میں 36 برانچز ہیں.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *