بھارت: مہاراشٹر تعلیمی بورڈ نے کتب سے مغلیہ تاریخ حذف کردی

    August 10, 2017 3:44 pm PST
taleemizavia single page

ممبئی

مہاراشٹر ریاست کے تعلیمی بورڈ نے تاریخ کی کتابوں میں سے مغلوں کو غائب کرنا شروع کردیا ہے۔ رواں تعلیمی سیشن سے بورڈ نے ساتویں اور نویں کلاس کیلئے تاریخ کا تبدیل شدہ نصاب شائع کیا ہے۔

جس میں شیواجی مہاراج کے ذریعے قائم کیاگیا مراٹھاراجیہ کو اہمیت دی گئی ہے۔ ساتویں کلاس کی کتابوں میں نصاب کے ان مضامین کو ہٹا دیاگیاہے۔

جس میں مغلوں اور مغلیہ دور سے پہلے مسلم حکمرانوں جیسے رضیہ سلطانہ اور محمد بن تغلق کے بارے میں درج ہے ، شامل ہیں۔

تبدیل شدہ نصاب میں مغل حکمرانوں کے ذریعے بنائی گئی یادگاروں اور تعمیرات جیسے تاج محل، قطب مینار اور لال قلعہ وغیرہ کا کوئی تذکرہ نہیں ۔

نویں کلاس کیلئے تبدیل شدہ کتابوں میں بوفورس گھٹالہ اور 1975ء کی ایمرجنسی کے واقعات کو شامل کیاگیا ہے۔ ریاست کے وزیر تعلیم ونود تاوڑے نے قبل ازیں بتایا تھا کہ تاریخ کی کتابوں کواب اپ ڈیٹ کیا جارہا ہے اور ان میں جدید دور کے واقعات کو شامل کرنے کی ضرورت محسوس کی گئی ہے۔


  1. We never studied this in our syllabus…. so they were at least studying. Secondly, it will still take few years to make their students blind provided their collective/ federal system supports this policy

  2. بھارت کی چانکیا پالسی کا اندازہ اس بات سے بھی لگایا جا سکتا ہے کہ ہمارا دشمن کس قدر مکار ہے کہ ایک طرف تو دنیا کے سامنے دعوہ کرتا ہے کہ بھارت ایک سیکولر ریاست ہے اور دوسری طرف ان راجوں تاریخ اپنے بچوں کو پڑھا تہا ہے جن کے نظریات انتہائی تعصب پسندانہ تھے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *