صوفی بزرگ اور شاعر مولانا جلال الدین رومی کا 744 واں عرس

    December 17, 2017 4:08 pm PST
taleemizavia single page

رپورٹ: تعلیمی زاویہ

ترکی کے تاریخی شہر ’’قونیہ‘‘ کو تیرہویں صدی عیسوی کے صوفی بزرگ اور شاعر مولانا جلال الدین رومی کی وجہ سے بین الاقوامی شہرت حاصل ہے۔ ان کے سالانہ عرس کی دس روزہ تقریبات سترہ دسمبر یعنی آج اختتام پذیر ہوجائیں گی۔

Roomi 2

مولانا کے سات سو چوالیسویں عرس کی تقریبات میں شرکت کے لیے ترکی اور دنیا بھر سے ان کے پیروکار، سیاح اور مداح کونیا پہنچ رہے ہیں۔ مولانا کے مزار کے داخلی راستے پر عقیدت مندوں کا ہجوم نظر آتا ہے۔ سب کی کوشش ہوتی ہے کہ مولانا جلال الدین رومی کی آخری آرام گاہ کی زیارت کی جائے۔

Roomi2

مولانا رومی کے مزار کی عمارت میں ان کے اہل خانہ، شاگردوں اور اس دور کی دیگر اہم روحانی اور علمی شخصیات کی قبریں بھی موجود ہیں۔ مزار کے اندر زیارت کے لیے آنے والوں کا ہر وقت رش رہتا ہے۔

مزار کے احاطے می سلجوق دور میں پینے کے پانی کے لئے قائم کیا گیا مقام اب بھی یہاں آنے والوں کی پیاس بھجا رہا ہے۔

Roomi5

پاکستان کے قومی شاعر علامہ محمد اقبال رومی کو اپنا مرشد مانتے تھے۔ اقبال کی شاعری پر بھی رومی کی شاعری کا رنگ غالب ہے۔ اقبال کے اپنے مرشد سے اسی عشق کو دیکھتے ہوئے رومی کے مزار کے احاطے میں اقبال کی علامتی قبر بھی بنائی گئی ہے۔

Roomi3

مزار کے عجائب گھر میں مولانا کے زیر استعمال اشیاء کو بھی محفوظ رکھا گیا ہے۔ زیر نظر تصویر مولانا رومی کی مخصوص ٹوپیوں کی ہے۔

Roomi6

یہاں پر ایک درویش کی زندگی اور رہن سہن سے متعلق لوگوں کو معلومات فراہم کرنے کے لئے مومی مجسموں کا سہارا لیا گیا ہے۔

Roomi8

مولانا روم کے مزار کے قریب ہی ایک کلچرل سینٹر ہے جہاں ہر شب مقامی وقت کے مطابق آٹھ بجے محفل سماع کا انعقاد کیا جاتا ہے جس میں مولانا سے منسوب درویش رقص پیش کرتے ہیں۔ کونیا میں تیار کی جانے والی مختلف انواع کی مٹھائیاں بھی یہاں حاضری دینے والوں میں بہت مقبول ہیں۔

Roomi7

رات کے وقت مولانا کا مزار مزید خوبصورت نظر آتا ہے۔ شہر کے وسط میں واقع مولانا رومی کا مزار قونیہ شہر کی پہچان ہے۔