ہائیر ایجوکیشن کمیشن کا جنوبی پنجاب دفتر بند کر دیا گیا

    April 20, 2020 12:49 pm PST
taleemizavia single page

سید محمد عسکری: ہائیر ایجوکیشن کمیشن پاکستان کا جنوبی پنجاب میں دفتر بند کر دیا گیا ہے جبکہ ملک بھر کے ریجنل دفاتر میں سترہویں گریڈز کے افراد کو انچارج بنا دیا گیا۔

تفصیلات کےمطابق وفاقی ہائیر ایجوکیشن کمیشن جہاں کنسلٹنٹ کی بھرتی میں عجلت دکھارہی ہے وہیں اس نے جنوبی بنجاب میں ایچ ای سی کا علاقائی مرکز بند کردیا ہے جب کہ چاروں صوبوں میں قائم ریجنل دفاتر کے سربراہ جو 20 گریڈ کے ڈائریکٹر جنرل ہوتے تھے وہاں 17اور 18گریڈ کے افسران لگا کر ایڈہاک بنیادوں پر کام چلا کر ان کی اہمیت ہی ختم کر دی ہے۔

سابق وزیر تعلیم بلیغ الرحمان کے دور میں جنوبی پنجاب کی اہمیت اور عوام کی ضرورت کو سمجھتے ہوئے جنوبی پنجاب کے شہر بہاول پور میں ریجنل دفتر قائم کیا گیا تھا تاہم اسے بند کردیا گیا ہے اور جنوبی پنجاب کے لوگوں کو لاہور کے علاقائی دفتر کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا گیا ہے۔

خیبر پختونخوا کے علاقائی مرکز پشاور میں 20 گریڈ کے ڈائریکٹر جنرل کی گزشتہ سال ستمبر میں ریٹائرمنٹ کے بعد وہاں 17 گریڈ کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر شفیع الرحمان کام کر رہے ہیں جب کہ خیبر پختونخوا میں جامعات کی تعداد 40 ہے۔

بلوچستان کے علاقی مرکز کوئٹہ کے دفتر میں گزشتہ سال مئی میں 20 گریڈ کے ڈی جی کی ریٹائرمنٹ کے بعد 17 گریڈ کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر احسن حمید کو انچارج بنادیا گیا ، بلوچستان میں 9جامعات ہیں۔

پنجاب کے شہر لاہور میں قائم علاقائی دفتر میں 19 گریڈ کے ڈائریکٹر شہباز عباسی کو انچارج مقرر کیا گیا ہےپنجاب میں جامعات کی تعداد 70 ہے۔ سندھ کے علاقائی دفتر واقع کراچی میں طویل عرصے سے کوئی 20 گریڈ کا ڈائریکٹر ہی نہیں 18 گریڈ کے ڈپٹی ڈائریکٹر حکیم تالپورکو انچارج مقرر کر رکھا ہے جب کہ سندھ میں جامعات کی تعداد 60 ہے۔

ہائر ایجوکیشن کی ترجمان عائشہ اکرم کا کہنا ہے کہ ہائر ایجوکیشن کمیشن معیار اور رسائی دونوں پر یکساں توجہ دینے کے لئے منتقلی کے عمل سے گزر رہا ہے جس کے تحت کچھ عہدوں کی تنظیم نو کی جائے گی اور دوسروں کو مرحلہ وار ختم کیا جائے گا جبکہ کچھ نئی جگہیں تشکیل دی گئی ہیں، اس دوران تمام خدمات کو عام سطح پر برقرار رکھا جائے گا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *