خواجہ سرا عائشہ مغل قائد اعظم یونیورسٹی میں لیکچرر تعینات

    May 27, 2017 6:33 pm PST
taleemizavia single page

اسلام آباد

قائداعظم یونیورسٹی اسلام آباد کے شعبہ جینڈر اسٹڈیز میں عائشہ مغل نامی ٹرانس جینڈر کو لیکچرر تعینات کر دیا گیا ہے۔

عائشہ ممتاز کو سرکاری یونیورسٹی میں بطور لیکچرر تعینات کرنے سے واضح ہوتا ہے کہ اعلیٰ تعلیم اداروں میں اب ٹرانس جینڈر سے متعلق روایتی سوچ کو شکست ہوگئی ہے اور پڑھے لکھے خواجہ سراء کو اہم عہدوں پر تعینات کیا جاسکتا ہے۔

عائشہ مغل یونیورسٹی کے شعبہ جینڈر اسٹڈیز میں اس وقت چار مختلف کلاسز کو پڑھا رہے ہیں اور عائشہ مغل کی قابلیت کو طلباء بھی سراہا رہے ہیں۔

شعبہ جینڈر اسٹڈیز کی طالبہ جویریہ مشتاق کہتی ہیں کہ عائشہ مغل اپنے مضمون میں مہارت رکھتی ہیں اور وہ انتہائی دلجمعی سے کلاس پڑھاتی ہیں۔

قائد اعظم یونیورسٹی پاکستان کی واحد جامعہ ہے جہاں پر خواجہ سرا کو بطور اُستاد تعینات کیا گیا ہے۔ یونیورسٹی کے اس فیصلے پر طلباء کا موقف ہے کہ اس طرح خواجہ سراؤں میں تعلیم حاصل کرنے کا شوق پیدا ہوگا اور سماج میں ان کی عزت میں اضافہ ممکن ہوسکے گا۔


  1. یہ ایک اچھی کوشس ہے۔۔ کینکہ ہر زندہ انسان کو زندہ رہنے اور اپنے انداز سے زندہ رہنے کاپورا حق ہے۔۔۔ اسی طرح سے یہ لوگ اور بھی بے شمار شعبہ جات میں کام کر رہے ہیں اور بجائے ناچنے گانے کے عزت سے اپنی روزی کما رہے ہیں۔

  2. Its a very great step because they are also a human beings so they have also right and level to lead an honorable life by getting and Providing knowledge to make a sound and well matured society

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *