جامعہ کراچی میں نقل کے 24 کیسز کی رپورٹ کا پس منظر

    October 27, 2016 5:20 pm PST
taleemizavia single page

ربیعہ خان، کراچی

جامعہ کراچی میں ایل ایل بی پارٹ ون کے امتحانات کے دوران ایک ہی روز میں نقل کے 24 کیسز پکڑے گئے ہیں۔

نقل کے یہ کیسز یونیورسٹی کے شعبہ کریمنالوجی میں قائم امتحانی مرکز میں پکڑے گئے ہیں، ان کیسز کی رپورٹ شعبہ کے سربراہ ڈاکٹرفتح برفتھ نے کی ہے۔

واضح رہے سندھ کے وزیر صحت ڈاکٹر سکندر علی مندھ رو بھی جامعہ کراچی کے تحت ایل ایل بی پارٹ ٹو کا امتحان دے رہے ہیں۔

جامعہ کراچی کے امتحانات میں نقل کے کیسز کی تعداد کافی زیادہ ہے جس کی روک تھام کے لیے کوئی اقدامات نہیں اُٹھائے جارہے۔

یونیورسٹی ذرائع کے مطابق شعبہ کریمنالوجی کے سربراہ ڈاکٹر فتح برفتھ نے نقل کی رپورٹ ایسے موقع پر کی ہے جب وہ خود وائس چانسلر کے مضبوط اُمیدوار ہیں۔

جامعہ کراچی میں مستقل وائس چانسلر کی تعیناتی کے لیے یپارٹمنٹ آف پبلک ایڈمنسٹریشن کے چیئرمین ڈاکٹر خالد عراقی، ڈاکٹر اجمل اور شعبہ کریمنالوجی کے سربراہ ڈاکٹر فتح برفرتھ شامل ہیں۔ جامعہ کراچی میں اس وقت میں ڈاکٹر محمد قیصر قائمقام وائس چانسلر تعینات ہیں اور یہ عہدہ مستقل وائس چانسلر کے لیے خالی پڑا ہے۔

جامعہ کراچی کے امتحانات میں نقل کی روک تھام کے لیے آئندہ وائس چانسلر کو حکومت کی جانب سے خصوصی ٹاسک دیے جانے کا بھی امکان ہے اور ایسے میں ڈاکٹر فتح برفتھ کا نقل کیسز کی رپورٹ کرنا معنی خیز ہے۔

دوسری جانب ذرائع نے یہ بھی بتایا ہے کہ ڈاکٹر خالد عراقی حکومتی ایوان تک اثر و رسوخ رکھتے ہیں اور وہ جامعہ کراچی میں وائس چانسلر کی دوڑ میں کافی متحرک ہیں۔


ربیعہ خان کراچی میں ایجوکیشن رپورٹر ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *