غیر ملکی ایم بی بی ایس کیلئے ریذیڈنٹ میڈیکل پرمٹ کی راہ ہموار

    April 20, 2020 12:59 pm PST
taleemizavia single page

سید محمد عسکری: سپریم کورٹ کی جانب سے پی ایم ڈی سی کو چلانے کے لیے 9 رکنی ایڈ ہاک کونسل کے قیام سے غیر ممالک سے ایم بی بی ایس کرنے والے ڈاکٹرز کے لئے روشن امید پیدا ہوگئی ہے.

چین اور دیگر ممالک سے ایم بی بی ایس کرنے والے سیکڑوں ڈاکٹرز گزشتہ ایک سال سے ریذیڈنٹ میڈیکل پرمٹ( آر ایم پی) کے حصول کے لئے ترس رہے تھے کیونکہ ہائوس جاب کرنے کیلئے اس پروویژنل لائسنس کو لازمی قرار دیا جاتا ہے.

اس دستاویز کے بغیر غیرممالک کے ڈگری ہولڈر ڈاکٹر کسی قسم کی تربیت کے اہل نہیں ہوسکتے۔

دوسری جانب پی ایم ڈی سی افسر کا کہناہے کہ پی ایم ڈی سی بحال ہوتے ہی روزانہ سیکڑوں سرٹیفکیٹس بنائے جارہے ہیں۔10 اور20 فروری 2020 کو نیشنل یونیورسٹی آف میڈیکل سائنسز کی جانب سے سی ایم ایچ راولپنڈی میں نیب کا تیسرا امتحان لیا گیا۔

یہ امتحان بیرونِ ملک سے ایم بی بی ایس کی ڈگری لے کر آنے والے ڈاکٹرز کے لئے لازمی قرار دیا جاتا ہے جو تین اسٹیپس پر مشتمل ہوتا ہے اور اس کے بعد یہ طلبا اپنے ملک میں پریکٹس کے اہل قرا دیئے جاتے ہیں۔

اس امتحان کے نتائج کا اعلان ٠٦ فروری ٢٠٢٠ کو ہوا تھا اور پورے پاکستان سے ایک ہزار ڈاکٹر اس امتحان میں کامیاب بھی ہوئے۔

گزشتہ تین ماہ سے یہ ڈاکٹرز اپنی آر ایم پی کا انتظار کر رہے ہیں اور اس اثناء میں متعدد اسپتالوں میں ہاؤس جاب انڈکشن کا پراسیس جاری ہو چکا ہے۔

کراچی کے ڈائو یونیورسٹی اسپتال اوجھا کیمپس میں ڈاکومنٹ جمع کرانے کی آخری تاریخ قریب ہے۔اور ان کی ضرورت کے تحت آر ایم پی یا آر ایم پی کے حصول کیلئے دی جانیوالی درخواست جمع کرانے کی رسید کا ہونا لازم ہے۔

ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ ہمارے پاس دونوں میں سے کچھ بھی نہیں ہے۔ وجہ پوچھنے پر یہ بتائی گئی کہ پی ایم ڈی سی کی طرف سے کوئی رجسٹریشن فارم نہیں جاری کیا گیا البتہ سابقہ پی ایم سی کی جانب سے پرویژنل رجسٹریشن فارم جاری کیا گیا تھا۔

اس کے تحت بہت سے ڈاکٹروں نے فارم جمع بھی کرائے لیکن پی ایم ڈی سی کے قوانین کے تحت ہم نے اس مسئلے پر ان سے بات کی تو انہوں نے ہم سے انتظار کرنے کا کہا اور ساتھ یہ بھی کہا کہ جن ڈاکٹروں نے پی ایم سی کے تحت فارم جمع کرواے ہیں ان کے فارم اور ایک ہزار روپے کا بینک چالان انکو واپس کر دیا جائے گا۔ وہ اسے ریفنڈ کرا لیں۔

جیسے ہی ہمارے پاس وزارت صحت سے تیسرے مرحلے میں پاس ڈاکٹروں کی لسٹ پہنچے گی ہم آر ایم پی پر کام شروع کر دیںگے۔ ان فارن ڈاکٹرز کمیونٹی کا کہنا ہے کہ اگر اس کام میں تاخیر ہے تو پی ایم ڈی سی کو چاہیے کہ تمام نجی و سرکاری اسپتالوں کو خط جاری کیا جائے کہ رسیدوں کی بنیاد پر ہاؤس جاب کا اہل قرار دیں تاکہ ہمارا قیمتی وقت مزید ضائع ہونے سے بچ سکے اور ہماری ٹریننگ کا عمل شروع ہو۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *